ویرات کوہلی اور ایلیسی پیری نے آئی سی سی دہائی کے بہترین کھلاڑی کا ایوارڈ اپنے نام کرلیا

0
83

دبئی۔29دسمبر :بھارتی کرکٹ ٹیم کے کپتان اور مایہ ناز بلے باز ویرات کوہلی اور آسٹریلوی خواتین ٹیم کی مایہ ناز آل رائونڈر ایلیسی پیری نے آئی سی سی کے دہائی کے بہترین کھلاڑی کا ایوارڈ جیت لیا۔سٹیو سمتھ دہائی کے ٹیسٹ پلیئر اور راشد خان دہائی کے ٹی ٹونٹی پلیئر قرار پائے۔ دبئی میں منعقدہ ایوارڈز کی تقریب میں بھارتی کپتان ویرات کوہلی نے گزشتہ دس سالوں میں تمام فارمیٹ کی کرکٹ میں کسی بھی کھلاڑی کے مقابلے میں زیادہ رنز بنائے ہیں۔ انہوں نے گزشتہ دس سالوں میں 20396 رنز بنائے ۔ ویرات کوہلی نے اس عرصہ میں سب سے زیادہ 66 نصف سنچریاں بھی بنائیں ۔ کوہلی کو دہائی کے بہترین ون ڈے پلیئر کا ایوارڈ بھی دیا گیا۔ وہ 2011 میں ورلڈ کپ اور 2013ءمیں چیمپئنز ٹرافی جیتنے والی بھارتی ٹیم میں شامل تھے۔ وہ پہلے کھلاڑی ہیں جنہوں نے اس مدت میں ایک روزہ میچوں میں دس ہزار ون ڈے رنز سکور کئے جن میں 39 سنچریاں اور 48 نصف سنچریاں شامل ہیں۔ آسٹریلوی خاتون کرکٹر ایلیسی پیری نے گزشتہ دس سالوں میں انٹرنیشنل میچوں میں 4349 رنز بنائے اور 213 وکٹیں حاصل کیں جو کسی اور کھلاڑی کے مقابلے میں زیادہ ہیں۔ انہیں آئی سی سی کی ون ڈے اور ٹی ٹونٹی کی دہائی کی بہترین خاتون کھلاڑی بھی قرار دیا گیا۔ وہ پانچ بار ورلڈ کپ کی فاتح ٹیم کا حصہ رہیں۔ آسٹریلیا نے 2013ءمیں 50 اوورز ورلڈ کپ اور 2012‘ 2014‘ 2018 اور 2020ءکے ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ میں فتح حاصل کی۔ ویرات کوہلی کو دہائی کے بہترین ون ڈے پلیئر کا ایوارڈ بھی دیا گیا۔ آسٹریلوی بلے باز سٹیو سمتھ نے دہائی کے ٹیسٹ پلیئر اور افغانستان کے سپنر راشد خان نے دہائی کے ٹی ٹونٹی پلیئر کا ایوارڈ حاصل کیا۔ ایوارڈز کا فیصلہ سابق کھلاڑیوں اور ایکسپرٹس پر مشتمل جیوری کے ساتھ ساتھ شائقین کے ووٹوں کے ذریعے کیا گیا۔ سابق بھارتی کپتان مہندر سنگھ دھونی نے دہائی کا سپرٹ آف کرکٹ ایوارڈ اپنے نام کیا۔ انہوں نے 2011ءمیں نوٹنگھم ٹیسٹ میں انگلش بلے باز آئن بیل کو عجیب اور غلط رن آوٹ قرار دیئے جانے پر واپس بلا لیا تھا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here